aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کچھ مرے شوق نے در پردہ کہا ہو جیسے

سیداحتشام حسین

کچھ مرے شوق نے در پردہ کہا ہو جیسے

سیداحتشام حسین

MORE BYسیداحتشام حسین

    کچھ مرے شوق نے در پردہ کہا ہو جیسے

    آج تم اور ہی تصویر حیا ہو جیسے

    یوں گزرتا ہے تری یاد کی وادی میں خیال

    خارزاروں میں کوئی برہنہ پا ہو جیسے

    ساز نفرت کے ترانوں سے بہلتے نہیں کیوں

    یہ بھی کچھ اہل محبت کی خطا ہو جیسے

    وقت کے شور میں یوں چیخ رہے ہیں لمحے

    بہتے پانی میں کوئی ڈوب رہا ہو جیسے

    کیسی گل رنگ ہے مشرق کا افق دیکھ ندیم

    ندی کا خوں رات کی چوکھٹ پہ بہا ہو جیسے

    یا مجھے وہم ہے سنتا نہیں کوئی میری

    یا یہ دنیا ہی کوئی کوہ ندا ہو جیسے

    بحر ظلمات جنوں میں بھی نکل آئی ہے راہ

    عشق کے ہاتھ میں موسیٰ کا عصا ہو جیسے

    دل نے چپکے سے کہا کوشش ناکام کے بعد

    زہر ہی درد محبت کی دوا ہو جیسے

    دیکھیں بچ جاتی ہے یا ڈوبتی ہے کشتئ شوق

    ساحل فکر پہ اک حشر بپا ہو جیسے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے