aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

عرفان احمد

غزل 5

 

اشعار 8

نشہ تھا زندگی کا شرابوں سے تیز تر

ہم گر پڑے تو موت اٹھا لے گئی ہمیں

زخم جو تو نے دیے تجھ کو دکھا تو دوں مگر

پاس تیرے بھی نصیحت کے سوا ہے اور کیا

جانے کس شہر میں آباد ہے تو

ہم ہیں برباد یہاں تیرے بعد

اکیلے پار اتر کے بہت ہے رنج مجھے

میں اس کا بوجھ اٹھا کر بھی تیر سکتا تھا

غم حیات نے بخشے ہیں سارے سناٹے

کبھی ہمارے بھی پہلو میں دل دھڑکتا تھا

کتاب 8

 

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے