aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

یہ اور بات ہے تجھ سے گلا نہیں کرتے

امجد اسلام امجد

یہ اور بات ہے تجھ سے گلا نہیں کرتے

امجد اسلام امجد

MORE BYامجد اسلام امجد

    یہ اور بات ہے تجھ سے گلا نہیں کرتے

    جو زخم تو نے دیے ہیں بھرا نہیں کرتے

    ہزار جال لیے گھومتی پھرے دنیا

    ترے اسیر کسی کے ہوا نہیں کرتے

    یہ آئنوں کی طرح دیکھ بھال چاہتے ہیں

    کہ دل بھی ٹوٹیں تو پھر سے جڑا نہیں کرتے

    وفا کی آنچ سخن کا تپاک دو ان کو

    دلوں کے چاک رفو سے سلا نہیں کرتے

    جہاں ہو پیار غلط فہمیاں بھی ہوتی ہیں

    سو بات بات پہ یوں دل برا نہیں کرتے

    ہمیں ہماری انائیں تباہ کر دیں گی

    مکالمے کا اگر سلسلہ نہیں کرتے

    جو ہم پہ گزری ہے جاناں وہ تم پہ بھی گزرے

    جو دل بھی چاہے تو ایسی دعا نہیں کرتے

    ہر اک دعا کے مقدر میں کب حضوری ہے

    تمام غنچے تو امجدؔ کھلا نہیں کرتے

    مأخذ:

    Nazdik (Pg. 36)

    • مصنف: Amjad Islam Amjad
      • اشاعت: 2014
      • ناشر: Sang-e-Meel Publications, Lahore
      • سن اشاعت: 2014

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے