aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

میں خود اپنی غزلیں اکثر پڑھتا ہوں حیرانی سے

سید سروش آصف

میں خود اپنی غزلیں اکثر پڑھتا ہوں حیرانی سے

سید سروش آصف

MORE BYسید سروش آصف

    میں خود اپنی غزلیں اکثر پڑھتا ہوں حیرانی سے

    کیسے پیچیدہ باتیں کہہ لیتا ہوں آسانی سے

    جس گھر میں بچے ہوتے ہیں اس گھر سے رہتی ہے دور

    ویرانی کو ڈر لگتا ہے بچوں کی شیطانی سے

    پیڑ بھی آنگن سے کٹوایا اور منڈیر پہ کانچ جڑے

    مشکل سے آزاد ہوا ہوں چڑیوں کی نگرانی سے

    درد گھنیرا ہجر کا صحرا گھور اندھیرا اور یادیں

    رام نکال یہ سارے راون میری رام کہانی سے

    تر آنکھیں ساحل پر رکھ کر کان لگا کر سنتا ہوں

    گہرا پانی کیا کہتا ہے مل کر اتھلے پانی سے

    یاد دعاؤں میں رکھو گے رسماً کہہ تو دیتے ہو

    کس نے کس کو یاد کیا ہے رسمی یاد دہانی سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے