Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کیونکر نہ خاکسار رہیں اہل کیں سے دور

بہادر شاہ ظفر

کیونکر نہ خاکسار رہیں اہل کیں سے دور

بہادر شاہ ظفر

MORE BYبہادر شاہ ظفر

    کیونکر نہ خاکسار رہیں اہل کیں سے دور

    دیکھو زمیں فلک سے فلک ہے زمیں سے دور

    پروانہ وصل شمع پہ دیتا ہے اپنی جاں

    کیونکر رہے دل اس کے رخ آتشیں سے دور

    مضمون وصل و ہجر جو نامہ میں ہے رقم

    ہے حرف بھی کہیں سے ملے اور کہیں سے دور

    گو تیر بے گماں ہے مرے پاس پر ابھی

    جائے نکل کے سینۂ چرخ بریں سے دور

    وہ کون ہے کہ جاتے نہیں آپ جس کے پاس

    لیکن ہمیشہ بھاگتے ہو تم ہمیں سے دور

    حیران ہوں کہ اس کے مقابل ہو آئینہ

    جو پر غرور کھنچتا ہے ماہ مبیں سے دور

    یاں تک عدو کا پاس ہے ان کو کہ بزم میں

    وہ بیٹھتے بھی ہیں تو مرے ہم نشیں سے دور

    منظور ہو جو دید تجھے دل کی آنکھ سے

    پہنچے تری نظر نگہ دور بیں سے دور

    دنیائے دوں کی دے نہ محبت خدا ظفرؔ

    انساں کو پھینک دے ہے یہ ایمان و دیں سے دور

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے