aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

مجھے خواب سراب عذاب دئے مری روح کا نغمہ چھین لیا

علی وجدان

مجھے خواب سراب عذاب دئے مری روح کا نغمہ چھین لیا

علی وجدان

MORE BYعلی وجدان

    مجھے خواب سراب عذاب دئے مری روح کا نغمہ چھین لیا

    آشوب ملال عشرت جاں وجدانؔ سے کیا کیا چھین لیا

    اک رنج سفر کی دھول مرے چہرے پہ گرد ملال ہوئی

    اک کیف جو سنگی ساتھی تھا اس کیف کا سایہ چھین لیا

    مرے ہاتھ بھی زخم دل کی طرح میں ٹوٹ گیا ساحل کی طرح

    اے درد غم ہجراں تو نے کیا مجھ کو دیا کیا چھین لیا

    ان رنگوں میں مرا رنگ بھی تھا ان باتوں میں مری بات بھی تھی

    مرا رنگ مٹا مری بات کٹی کس نے مرا رستہ چھین لیا

    اے شہر الم مری بات تو سن تو خواب مرے واپس کر دے

    میں تیرا کرم لوٹا دوں گا تو نے مرا چہرہ چھین لیا

    میں نوحہ گری تک بھول گیا مرے لوگ جلے مرے شہر لٹے

    اس شہر معیشت نے مجھ سے احساس کا دریا چھین لیا

    یہ سود و زیاں کی باتیں ہیں ان باتوں میں کیا رکھا ہے

    اک خواب تمنا دے کے مجھے اک خواب تمنا چھین لیا

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے